’’ملک میں ذات ، نسل ، مذہب اور علاقہ کے نام پر تفریق فسطائی سازش‘‘مفتی حنیف احرارؔ سوپولوی ملک گیر ’’ تفریق مسلم ہمیں منظور نہیں، اتحاد مہم ‘‘ کے تحت گوا کی سرزمین پر عظیم الشان ’’اتحادِ امت کانفرنس‘‘ کا انعقاد

۱۰؍ مئی ، ۲۰۱۶ء ؁، مطابق: ۱۵؍ رجب المرجب ۱۴۳۷ھ ؁، شاہین باغ ، نئی دہلی۔
’’ملک میں ذات ، نسل ، مذہب اور علاقہ کے نام پر تفریق فسطائی سازش‘‘مفتی حنیف احرارؔ سوپولوی
ملک گیر ’’ تفریق مسلم ہمیں منظور نہیں، اتحاد مہم ‘‘ کے تحت گوا کی سرزمین پر عظیم الشان ’’اتحادِ امت کانفرنس‘‘ کا انعقاد

’’ ملک بھر میں آر ایس ایس اور فسطائی جماعتوں کے ذریعہ پیدا کی جا رہی مسلکی ، مذہبی ،نسلی اور علاقائی تفریق و منافرت کے خلاف آل انڈیا امامس کونسل نے پورے ملک میں ’’تفریق مسلم ہمیں منظور نہیں، اتحاد مہم‘‘ چلا ئی ہے ، جس کے تحت گوا کی سر زمین پر عظیم الشان ’’اتحادِ امت کانفرنس‘‘ منعقد کیا گیا۔ جس میں بلا تفریق مسلک و مشرب تمام مکاتب فکر کے علماء و ائمہ و حفاظ اور عوام نے شرکت کی۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوے آل انڈیا امامس کونسل کے قومی ناظم عمومی مفتی حنیف احرارؔ سوپولوی نے کہا کہ: ’’ مسلمانوں میں تفریق پیدا کرنے کے لیے مسلم راشٹریہ منچ، مسلم راشٹریہ مہیلا مورچہ اور دیگر اسلامی نام کی تنظیموں کو استعمال کرنا ملک کے عوام کو دھوکہ دینا ہے۔ یہ دھوکہ بازی اب چلنے والی نہیں ہے۔ یہاں کی عوام میں تفریق ڈالنے کی سازش کا ہم پردہ فاش کر کے رہیں گے اور جو بھی طاقت ہمیں بانٹنے کی کوشش کرے گی اُسے منھ توڑ جواب دیں گے‘‘۔ انھوں نے بات جاری رکھتے ہوے کہا کہ : ’’اس ملک میں ہمارا دشمن کوئی ہندو، کوئی سکھ، عیسائی، دلت، آدی واسی، بدھسٹ، کمیونسٹ نہیں ہے، ہمارا دشمن وہ فسطائی جماعتیں ہیں جو یہاں کی گنگاجمنی تہذیب اور یہاں کے دستور کو بدلنے کی بات کرتے ہیں، جو ہندو مسلم اتحاد کو دیکھنا نہیں چاہتے، جو مسلمانوں میں تفریق کی آگ لگا کر اپنی سیاسی کرسی گرم کرنا چاہتی ہیں۔ جو لوگ ہندستان جیسے عظیم ہندستان کو ہندو راشٹر بنانے کا خواب دیکھ رہے ہیں‘‘۔
انھوں نے کہا کہ : ’’جب تک کسی قوم کو تحفظ، برابری اور انصاف نہیں ملتا اس کا وجود باقی نہیں رہ سکتا ہے اور جب تک کوئی قوم تعلیم، معاش، سیاست، دفاع اور سماج میں مضبوطی حاصل نہیں کر لیتی وہ قوم کبھی بھی ترقی نہیں کر سکتی ہے‘‘۔ انھوں نے بتایا کہ : ’’ہماری تنزلی کا باعث ’’وہن‘‘ ہے جو حب الدنیا اور کراہۃ الموت کا مجموعہ ہے۔ اگر کسی قوم کو آگے بڑھنا ہے تو انھیں ’’وہن اور حزن‘‘ کو ترک کر کے مضبوط ایمانی قوت کے ساتھ آگے بڑھنا پڑے گا اور جو قوم ایسا کرے گی وہی قوم اعلی اور امپاور رہے گی‘‘۔
کونسل کے ریاستی نائب صدر مولانا الطاف قاسمی نے کہا کہ : ’’آل انڈیا امامس کونسل اس ’’اتحادِ امت کانفرنس‘‘ کے ذریعے تمام ملک کو آگاہ کرنا چاہتی ہے کہ : ’’مسلمان کسی بھی مسلک پر رہ کر وہ مسلمان ہیں؛ اس لیے ہمیں اپنے اپنے مسلکوں پر رہتے ہوے امت کے تحفظ و تقویت اور ملک کی سلامتی کے لیے کام کرنے کی ضرورت ہے‘‘۔ استقبالیہ کونسل کے ریاستی جنرل سکریٹری مولانا یونس صاحب نے پیش کیا۔ پروگرام میں مختلف علماء کرام نے اپنے اپنے خطابات اور تأثرات پیش کیے بالخصوص مولانا عرفان صاحب امام و خطیب : بلال مسجد چاندواڑا، مولانا اسلم صاحب ، مولانا مقبول صاحب استاذ جامعۃ المعارف مڈگاؤں، افتتاحی خطاب مولانا الطاف قاسمی نے کیا اور حافظ اختر صاحب کے اظہارِ تشکر پر کانفرنس اختتام پذیر ہوئی۔ کانفرنس الفا کارنر کے کھلے گراؤنڈ میں ہوئی جس میں بھاری تعداد میں تمام مکاتب فکر کے عوام میں ذوق و شوق سے شرکت کی۔
ایم ، ایچ، احرارؔ سوپولوی
قومی ترجمان : آل انڈیا امامس کونسل

 

Location


DELHI
F-20, III Floor, Shaheen Bagh, Jamia Nagar, Okhla, New Delhi 110025, India

 

Contact

Give us a call at

+91 98809 80310

+91 99607 19466

Email us at allindiaimamscouncil@gmail.com

 

Newsletters

Subscribe and get the latest updates, news, and more...