’’مسلم نوجوانوں کی گرفتاری مرکزی حکومت کی ناکامیوں پر پردہ پوشی کی سازش، بلاثبوت گرفتاری دلی اسپیشل سیل کی پہچان‘‘۔

۸؍ مئی، ۲۰۱۶، مطابق: ۳۰؍ رجب المرجب ۱۴۳۷ھ ؁، شاہین باغ ، نئی دہلی۔
’’مسلم نوجوانوں کی گرفتاری مرکزی حکومت کی ناکامیوں پر پردہ پوشی کی سازش، بلاثبوت گرفتاری دلی اسپیشل سیل کی پہچان‘‘۔
دہلی اسپیشل سیل ملکی سیکوریٹی کے نام پر دھبہ، شبہ کے نام پر مسلم کمیونٹی کو بدنام کرنے والے پولیس کو دی جائے سخت قانونی سزا۔ آل انڈیا امامس کونسل

’’ملک میں فسطائی نظام لاگو ہونے کی وجہ سے تمام خفیہ ڈپارٹمنٹ بالخصوص دہلی اسپیشل سیل کی دست درازیاں روز بروز ترقی پر ہے۔ شبہ کے نام پر کسی مشتبہ تنظیم سے جوڑ کر آئے دن مسلم نوجوانوں اور علماؤں کو گرفتار کرنا، یا پھر الزام تراشی کرنا اور سلاخوں کے پیچھے ڈالنا ایک مقصد بن گیا ہے۔ ان سب کے پیچھے مسلم کمیونٹی کو خوف و ہراس میں مبتلا کرنے کی سازش کار فرما ہے۔ایسے خاطی پولیس والوں کو فوری طور پر نوکری سے برخاست کیا جائے اور سخت سے سخت قانونی سزا دی جائے‘‘۔ ان باتوں کا اظہار آل انڈیاامامس کونسل کے قومی صدر مولانا عثمان بیگ رشادی نے کیا ۔
انھوں نے کہاکہ : ’’مسلم کمیونٹی کو مسلسل خوف و ہراس اور بے اطمینانی کی صورت حال سے دوچار کرنے کی سیاست بند کیا جائے۔ جن نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا ہے، ان کو فوراً رہا کیا جائے‘‘۔ انھوں نے کہا کہ : ’’اب یہ شبہ کے نام پر گرفتاری والا ’’گورکھ دھندا‘‘ ہندستانی عوام سے سامنے آچکا ہے ، ہر ہندستانی جان چکا ہے کہ حکومت یہ سب اپنی ناکامیوں پر پر ڈالنے کے لیے کرا رہی ہے‘‘۔
کونسل کے قومی ناظم عمومی مفتی حنیف احرارؔ سوپولوی نے کہا کہ : ’’ملک کے سیکوریٹی کو غیر جانب دار ہونا چاہیے۔ اس طرح دلی اسپیشل سیل کا مسلسل جانب دارانہ غیر قانونی حرکتیں ان کی فسطائی نوازی کا شبہ پیدا کرتا ہے۔ ایسے عناصر جو ملکی ڈپارٹمنٹ میں رہ کر جانب دارانہ رویہ برتے انھیں اپنے عہدوں پر رہنے کا کوئی حق نہیں ہے‘‘۔
قومی جنرل سکریٹری نے کہا کہ : ’’آج جس طرح کا ماحول بنایا جا رہا ہے، اس سے صاف ظاہر ہے کہ موجودہ حکومت ملک کی ترقی اور تعمیر پر نہیں تفریق و تخریب پر یقین رکھتی ہے۔ کیا اس سے ملک کی ترقی ہو سکے گی؟‘‘۔
انھوں نے کہاکہ : ’’ آل انڈیا امامس کونسل مطالبہ کرتی ہے کہ قومی امن و شانتی کا ماحول بنانے اور تمام طبقات اور مذاہب کے ماننے والوں میں اطمینان کا اعتماد بحال کرنے کے لیے حکومت اقدامات کرے ۔ بے قصور گرفتار شدہ نوجوانوں اور علماؤں کو فوراً رہا کرے۔ خاطی پولیس والوں کو قرارِ واقعی سزا دے۔ اسی سے ملک آگے بڑھے گا اور تمام ہندستانیوں میں حکومت کے تعلق سے اعتماد بحال ہوگا‘‘۔
ایم ، ایچ ، احرارؔ سوپولوی
قومی ترجمان : آل انڈیا امامس کونسل

 

Location


DELHI
F-20, III Floor, Shaheen Bagh, Jamia Nagar, Okhla, New Delhi 110025, India

 

Contact

Give us a call at

+91 98809 80310

+91 99607 19466

Email us at allindiaimamscouncil@gmail.com

 

Newsletters

Subscribe and get the latest updates, news, and more...