’’ساری دنیا میں سب سے زیادہ مہنگا پٹرول بیچنے والی حکومت بی جے پی ‘‘۔آل انڈیا امامس کونسل عوام کا ذہن دوسری چیزوں میں اُلجھا کر ملک کا خزانہ بٹورنے میں لگی ہے بی جے پی اور آر ایس ایس۔

۱۴؍ مئی، ۲۰۱۶ء ؁، مطابق: ۵؍ شعبان المعظم ۱۴۳۷ھ ؁، شاہین باغ ، نئی دہلی۔
’’ساری دنیا میں سب سے زیادہ مہنگا پٹرول بیچنے والی حکومت بی جے پی ‘‘۔آل انڈیا امامس کونسل
عوام کا ذہن دوسری چیزوں میں اُلجھا کر ملک کا خزانہ بٹورنے میں لگی ہے بی جے پی اور آر ایس ایس۔

’’ملک کا خزانہ یہاں کی عوام کی امانت ہے۔ اس کو صرف ملک کے مفاد میں ہی استعمال کیا جا سکتا ہے۔ رعایا کے خون پسینے کی کمائی کو کسی پارٹی یا کسی تنظیم کی تشہیر اور مفاد کے لیے استعمال کرنا بالکل جائز اور درست نہیں ہے۔ بی جے پی حکومت جب سے آئی ہے تب سے ملک کا خزانہ پانی کی طرح فسطائی ایجنڈے کی تکمیل کے استعمال کیا جا رہا ہے۔ ایک طرف وزیر اعظم غیر ضروری اسفار میں پانی کی طرح روپے اُڑا رہے ہیں تو دوسری طرف آر ایس ایس کے لیڈروں پر الگ الگ بہانے سے ملکی خزانے کے دھانے کھول دیے گئے ہیں تو کہیں مسلمانوں ، عیسائیوں اور دلتوں کے مابین تفریق و تقسیم اور ان کی مذہبی و ثقافتی تخریب و تہلیک کے لیے قوم کے پیشے بے دریغ خرچ کیے جا رہے ہیں۔ اسکالر شپس، پسماندہ طبقات اور کسانوں کے بجٹ میں کٹوتی کر کے ملک کو کنگال بنانے کا منصوبہ پورے شباب پر ہے‘‘۔ ان باتوں کا اظہار آل انڈیاامامس کونسل کے قومی صدر مولانا عثمان بیگ رشادی نے آج ایک پریس ریلیز جاری کرتے ہوے کیا ۔
انھوں نے کہاکہ : ’’ملک کا روپیہ یہاں کے عوام کی امانت ہے۔ اس کے ایک ایک پائی حساب دینا ہوگا۔ اس میں ذرہ برابر بھی خرد برد برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ساری دنیا میں آج خام تیل سستا ہو چکا ہے؛ لیکن بی جے پی حکومت یہاں کے عوام کے لیے ’’پٹرول‘‘ کو سستا کرنے کے بجائے مہنگا ہی کرتی جا رہی ہے۔ آخر روزانہ کی کروڑوں کی آمدنی کہاں جا رہی ہے؟ وزیر اعظم اور دوسرے لیڈران جو بے دریغ خزانے اُڑا رہے ہیں اس کا حساب کون دے گا؟‘‘۔
آل انڈیا امامس کونسل کے قومی ناظم عمومی مفتی حنیف احرارؔ سوپولوی نے کہا کہ : ’’جب سے ملک میں بی جے پی کی حکومت آئی ہے کیپیٹل ازم میں روز بروز ترقی ہو رہی ہے۔ امیر اور امیر اور غریب اور غریب ہوتا جا رہا ہے۔ لوگ غربت اور بھوک کی وجہ سے خود کشیاں کر رہے ہیں؛ مگر مودی حکومت اپنی نگاہ فسطائی ایجنڈے سے اس طرف پھیرنے کے لیے تیار نہیں ہے ‘‘۔
انھوں نے کہا کہ :’’فسادات اور بم بلاسٹوں کے حقیقی مجرموں کو چھڑانا اور غیرمجرموں کو مجرم بنا کر سلاخوں کے پیچھے دھکیلنا اس حکومت کی سب سے بڑی ناکامی ہے اور مہنگائی پر کنٹرول کے بجائے اس کے لیے جواز پیش کرنا اور دلتوں، آدی واسیوں ، کسانوں اور اقلیتوں کے حقوق کی آواز پر مظالم اس پر مستزاد ہے‘‘۔
کونسل کے نیشنل جنرل سکریٹری اور قومی ترجمان نے کہاکہ : ’’جس ملک میں حکومت عوام کے مفاد کو ترک کردیتی ہے اور چند لوگوں کے ہاتھوں کی رکھیل بن جاتی ہے ، وہاں کی عوام میں بغاوت کا کوہِ آتش فشاں پھوٹ پڑتا ہے؛ اس لیے آل انڈیا امامس کونسل مرکزی حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ: ’’حکومت فسطائی اور ہندوتوا ایجنڈوں کو چھوڑ کر عوام کی ضروریات پر توجہ کرے۔ زبانی جمع خرچ کی بجائے حقیقت کی آنکھ سے اس ملک کے سسکتے ، تڑپتے اور بلکتے عوام کے لیے اپنے فرض منصبی کو ادا کرے۔ آسمان چھوتی مہنگائی پر کنٹرول کرے۔ پٹرول اور گیس پر سیاست بند کر کے عوام کو سانس لینے کا موقع فراہم کرے۔ حقیقت میں یہی ’’سوچھ بھارت‘‘ کی طرف بڑھتا قدم ہو گا ‘‘۔
ایم ، ایچ ، احرارؔ سوپولوی
قومی ترجمان : آل انڈیا امامس کونسل

 

Location


DELHI
F-20, III Floor, Shaheen Bagh, Jamia Nagar, Okhla, New Delhi 110025, India

 

Contact

Give us a call at

+91 98809 80310

+91 99607 19466

Email us at allindiaimamscouncil@gmail.com

 

Newsletters

Subscribe and get the latest updates, news, and more...