کشمیر میں بی جے پی اور محبوبہ مفتی کی کٹ پتلی حکومت ،جان بوجھ کر مسلمانوں کے ساتھ آنکھ مچولی کا کھیل کھیل رہی ہے

۲۹؍ اگست ، ۲۰۱۶ء ؁، مطابق:۲۵؍ ذوالقعدہ۱۴۳۷ھ ؁، شاہین باغ ، نئی دہلی۔
کشمیر میں بی جے پی اور محبوبہ مفتی کی کٹ پتلی حکومت ،جان بوجھ کر مسلمانوں کے ساتھ آنکھ مچولی کا کھیل کھیل رہی ہے
۵۲، دنوں سے مسلسل ہور ہی نسل کوشی پر کوئی کان دھرنے کو تیار نہیں،علاقہ کے نوجوانوں کو آپاہچ اور مفلوج بنانے کا منصوبہ ۔ آل انڈیا امامس کونسل

’’کشمیر ہندستان کا اٹوٹ حصہ ہے۔ اور اس کے لیے ہر ہندستانی اپنی ہر قربانی پیش کرنے کے لیے تیار ہے۔ یہ ہندستان کی بدقسمتی ہے کہ کشمیر جیسے حساس مسئلہ کو الیکشن سے پہلے ہر سیاسی پارٹی اپنے ہتھیار کے طور استعمال کرتی آئی ہے۔ سوال یہ ہے کہ کیا کشمیر آج کا مسئلہ ہے؟ اور کیا کشمیر میں ہماری فوجوں کی کمی ہے؟ نہیں، تو پھر آج تک یہ نسل کشی ختم کیوں نہیں ہوئی اور اس پر ابھی تک کنٹرول کیوں حاصل نہیں ہوا؟ اگر اس کی باریکی میں غور کریں گے تو ہمیں معلوم ہوگا کہ آج تک کسی حکومت نے سنجیدگی سے اس کو حل کرنے کی کوشش ہی نہیں کی ہے‘‘۔ آل انڈیا امامس کونسل کے قومی صدر مولانا عثمان بیگ رشادی نے کشمیر کے مسئلہ پر میڈیا سے بات کرتے ہوے ان خیالات کا اظہار کیا۔
انھوں نے کہا کہ: ’’ کشمیر میں مسلم نسل مسلسل جاری ہے ؛ مگر نام اور اشو ایسا بنایا جاتا ہے کہ نسل کشی کا الزام نہ آئے۔ سانپ بھی مرجائے اور لاٹھی بھی نہ ٹوٹے‘‘۔ قومی صدر نے مزید کہا کہ : ’’آج کشمیر میں جتنی اموات ہو چکی ہیں اور جتنے نوجوان اور عوام اپاہچ ہو چکے ہیں، اس کے ذمہ دار بی جے پی اور محبوبہ مفتی حکومت ہیں۔ یہ لوگ اگر چاہیں تو یہ مسئلہ کل ختم ہو سکتا ہے؛ مگر ماحول گرم کر کے ووٹ حاصل کرنا ان کی مجبوری بن چکا ہے‘‘۔
مولانا رشادی نے مزید کہا کہ : ’’اگر مسئلہ کشمیر کو بی جے پی کنٹرول نہیں کر سکتی ہے تو انھیں حکومت سے فوراً استعفیٰ دے دینا چاہیے‘‘۔
آل انڈیا امامس کونسل کے ناظم عمومی مولانا شاہ الحمید باقوی نے کہا کہ : ’’کشمیر میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ کشمیری مسلم نسل کشی کی منظم سازش کا نتیجہ ہے، جس پر الگ الگ قسم کے لیبل لگائے جا رہے ہیں۔ اس طرح کے حالات پیدا کرکے بی جے پی کارکنان بڑی چابک دستی سے محبوبہ حکومت کی ساخ ختم کرنے میں لگے ہوئے ہیں۔ اگر ان حالات پر فوراً کنٹرول نہیں کیا گیا اور وادی میں یہی صورتِ حال برقرار رہی تو دوبارہ کبھی بھی محبوبہ مفتی حکومت کشمیر میں سر نہیں اُٹھا سکے گی‘ ‘۔
کونسل کے نیشنل جنرل سکریٹری اور قومی ترجمان مفتی حنیف احرارؔ سوپولوی نے کہا کہ :’’آل انڈیا امامس کونسل مطالبہ کرتی ہے کہ ریاستی اور مرکزی حکومتیں ملک میں آئینی بالادستی اور قومی تحفظ کے لیے کام کو اپنا مشن بنائیں۔ اور کشمیر اور کشمیر جیسے ملک بھر میں پیدا کیے جانے والے حالات فوراً ختم کیے جائیں۔اسی میں ملک ، آئین اور پوری قوم کی بھلائی مضمر ہے‘‘۔
ایم ، ایچ، احرارؔ سوپولوی
قومی ترجمان : آل انڈیا امامس کونسل

 

Location


DELHI
F-20, III Floor, Shaheen Bagh, Jamia Nagar, Okhla, New Delhi 110025, India

 

Contact

Give us a call at

+91 98809 80310

+91 99607 19466

Email us at allindiaimamscouncil@gmail.com

 

Newsletters

Subscribe and get the latest updates, news, and more...