دلتوں اور مسلمانوں پر مسلسل ظلم و تشدد ، حکومت کی پشت پناہی کے بغیر ناممکن، خواتین پر دست درازی ناقابل برداشت ظالموں کو پھانسی کی سزا دی جائے ۔ فسطائی عناصر کے مظالم کے خلاف تمام ہندستانیوں کا متحدہ ایکشن لینے کا وقت آگیا ہے ۔ آل انڈیا امامس کونسل

۲؍ اگست ، ۲۰۱۶ء ؁، مطابق:۲۷؍ شوال۱۴۳۷ھ ؁، شاہین باغ ، نئی دہلی۔
دلتوں اور مسلمانوں پر مسلسل ظلم و تشدد ، حکومت کی پشت پناہی کے بغیر ناممکن، خواتین پر دست درازی ناقابل برداشت
ظالموں کو پھانسی کی سزا دی جائے ۔ فسطائی عناصر کے مظالم کے خلاف تمام ہندستانیوں کا متحدہ ایکشن لینے کا وقت آگیا ہے ۔ آل انڈیا امامس کونسل

’’ملک کی ترقی کے لیے ’’مثبت سیاست‘‘ کی ضرورت ہے۔ نفرت بھری سیاست سے ملک کو ترقی کا خواب دکھانا فسطائی عناصر کی دھوکہ بازی ہے۔وہ دراصل ہندستانیوں کے قیمتی لہو سے اسرائیل کی کھیتی سینچنا چاہتے ہیں۔ گجرات میں دلتوں پر کھلے عام مظالم اور مدھیہ پردیش میں پولیس کے سامنے بیف کے نام پر عورتوں کی سر عام پٹائی ایک بہت بڑی سازش کا غماز ہے۔ جس کا ذمہ دار موجودہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں ہیں ‘‘۔ ان باتوں کا اظہار آل انڈیا امامس کونسل کے قومی صدر مولانا عثمان بیگ رشادی نے کیا۔
انھوں نے کہا کہ : ’’ہندستان کی تاریخ میں ایسے حالات ملک پر کبھی نہیں آئے تھے کہ اس قدر بین المذاہب نفرت پھیلا کر سیاسی قوت حاصل کرنے کی کوشش کی گئی ہو۔ یہ انگریزوں کے اصولوں پر چلنے والے فسطائی ایجنٹوں کی سازش ہے۔ جس کے خلاف تمام ہندستانیوں کو متحد ہونے کی ضرورت ہے‘‘۔
کونسل کے قومی ناظم عمومی مولانا شاہ الحمید باقوی نے کہا کہ: ’’مدھیہ پردیش میں عورتوں کی سرعام پٹائی بہت بڑی سازش کا ایک حصہ ہے۔ تعجب تو یہ ہے کہ اتنا کچھ ہونے کے باوجود مرکزی حکومت اپنی زبان تک کو حرکت دینے کے لیے تیار نہیں، چہ جائے کہ اس کے خلاف ایکشن لیا جائے۔ نام کے لیے چند لوگوں کو گرفتار کرنا اور پھر دوسرا اِشو اُٹھا کر ان کو خاموشی سے رہا کر دینا حکومت کا عوام کو بے وقوف بنانے کا روز مرہ کا مشغلہ بن چکا ہے ‘‘۔ انھوں نے کہا کہ : ’’اس طرح کی سیاست کسی بھی حکومت کے لیے اچھی چیز نہیں ہے‘‘۔
آل انڈیا امامس کونسل کے نیشنل جنرل سکریٹری اور قومی ترجمان مفتی حنیف احرارؔ سوپولوی نے کہا کہ : ’’اگر مرکزی اور صوبائی حکومتیں ان ظالموں کو سزا نہیں دیتیں اور مظلومین کو انصاف نہیں دلا سکتی ہیں تو پھر انھیں حکومت کی کرسیوں پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں پہنچتا ہے ۔ ایسی حکومتیں اپنا استعفا پیش کریں‘‘۔ انھوں نے کہاکہ : ’’ فسطائیت اور بھگوائیت کے پروردہ غنڈوں کی ناپاک سازشوں کو ناکام بنانے کے لیے اگر ابھی کوشش نہیں کی گئی تو حالات بد سے بدتر ہو جائیں اور یہاں پر سواسو کروڑ ہندستانیوں کا سانس لینا دوبھر ہو جائے گا‘ ‘۔
کونسل کے قومی ترجمان نے مزید کہا کہ : ’’آل انڈیا امامس کونسل تمام مسالک کے علماء، ائمہ اور حفاظ کی وہ مشترکہ تنظیم ہے جو اس بات پر یقین رکھتی ہے کہ ’’ظلم خواہ کتنا بھی سنگین کیوں نہ ہو اور ظالم چاہے کتنا ہی بڑا کیوں نہ ہو اس کے خلاف آواز اُٹھانا ہمارا انسانی حق ہے۔ جس سے ہم دست بردار نہیں ہو سکتے ہیں۔ امامس کونسل بلاتفریق مذہب و مشرب تمام ہندستانیوں کو دعوت دیتی ہے کہ وہ ایک ساتھ مل کر موجودہ ظالم حکمرانوں کے خلاف آواز اُٹھائیں اور مظلومین کو انصاف دلانے کے لیے آگے آئیں۔ یہی ہماری انسانی ذمہ داری ہے ‘‘۔
ایم ، ایچ، احرارؔ سوپولوی
قومی ترجمان : آل انڈیا امامس کونسل

 

Location


DELHI
F-20, III Floor, Shaheen Bagh, Jamia Nagar, Okhla, New Delhi 110025, India

 

Contact

Give us a call at

+91 98809 80310

+91 99607 19466

Email us at allindiaimamscouncil@gmail.com

 

Newsletters

Subscribe and get the latest updates, news, and more...